2

Best Top 46 Bewafa Urdu Poetry-Disloyally 2 Lines shayari

 

وہ وقت بہت تکلیف دہ ہوتا ہے جب کوئی آپ
کو ایسی وقت پہ چھوڑ جائے جب آپ کے پاس کوئی بھی نا ہو۔ آپ اپنا سب کچھ اس کو سمجھتے
ہوں اور وہ آپ کو دھوکہ دے جائے اور وہ بھی اس وقت جب آپ کو اس کی بہت ضرورت ہو ایسی
وقت پر انسان ٹوٹ جاتا ہے جیسے انسان کی دنیا ہی ختم ہو گئی ہو

سب کو معلوم ہے کہ محبت تکلیف دیتی ہے
دکھ درد دیتی ہے ، لیکن اگر آپ کو کوئی دھوکہ دیتا ہے اک سے بے وفائی کرتا تو یہ زیادہ
تکلیف دہ ہوتی ہے

 دو
انسان ایک دوسرے سے محبت کرتے ہیں وہ ایک دوسرے کے ساتھ بہت زیادہ وقت گزارتے ہیں۔اور
اچانک سے اگر ایک شخص ان کے درمیان کے سارے رشتے توڑ کر چلا جاتا ہے۔ جو انسان چھوڑ
کے چلا جاتا ہے اسے پہلے شخص کا بیوفا انسان کہا جاتا ہے۔

بے وفا انسان کبھی دوسرے انسان کی پرواہ
نہیں کرتا دوسرے انسان نے اس کے لیے جتنی بھی قربانیاں دیں ہوئی ہوں بے وفا انسان کو
کوئی فرق نہیں پڑتا وفا دار انسان اپنا س کچھ مال دولت اپنی زندگی تک اس انسان کے سپرد
کر دیتا ہے وفادار انسان ہر وقت حکم کی تعمیل میں رہتا ہے
 

وفا کرنے والا انسان دوسرے انسان سے اسی
بات کی توقع رکھتا ہے کہ اس کو سب سے زیادہ عزیز سمجھا جائے اس کو اہمیت دی جائے مگر
سب اس کا وہم ہوتا ہے اس کی وفا کے بدلے میں ہمیشہ اس کو بے وفائی ہی ملتی ہے کوئی
اس کی محبت اور وفا کو نہیں سمجھتا۔

 مختصر
میسجز، ایس ایم ایس، کو اپنے سوشل میڈیا وٹس ایپ، فیس بک، ٹوئٹر، انسٹاگرام، پنٹرسٹ
پر آسانی سے کاپی کر کے بھیج سکتے ہیں ہماری ویب سائٹ
poetry4uh.com پر آپ کی پسندیدہ شاعری کا بہت بڑا ذخیرہ  اردو انگلش اور خوبصورت تصاویر کی صورت میں موجود
ہے  جس کو آپ اپنے دوستوں، عزیزو اقارب کو با
آسانی بھیج سکتے ہیں اس کی چاہت کے مقابلے میں دنیا کی ہر چیز چھوٹی پڑ جاتی ہے مگر
بے وفا انسان کو اس سے بالکل بھی فرق نہیں پڑتا کہ اس کی خاطر کوئی کیا کر رہا ہے

وہ تو خوش بو ہے ہواؤں میں بکھر جائے گا

مسئلہ پھول کا ہے پھول کدھر جائے گا


woh to khush bo hai hawaon mein bikhar

jaye ga
masla phool ka hai phool kidhar jaye ga

جمع تم ہو نہیں سکتے

ہمیں منفی سے نفرت ہے

jama tum ho nahi satke
hamein manfi se nafrat hai

ہاتھ میرے بھول بیٹھے دستکیں دینے کا فن

بند مجھ پر جب سے اس کے گھر کا دروازہ ہوا

haath mere bhool baithy dastaken dainay ka fun
band mujh par jab se is ke ghar ka darwaaza sun-hwa

اس کے یوں ترک محبت کا سبب ہوگا کوئی

جی نہیں یہ مانتا وہ بے وفا پہلے سے تھا

is ke yun tark mohabbat ka sabab hoga koi
jee nahi yeh maanta woh be wafa pehlay se tha

چنتی ہیں میرے اشک رتوں کی بھکارنیں

محسنؔ لٹا رہا ہوں سر عام چاندنی

chunti hain mere asshk ruttoon ki bhikarnain
muhsin luta raha hon sir aam chandni

اب کے بارش میں تو یہ کار زیاں ہونا ہی تھا

اپنی کچی بستیوں کو بے نشاں ہونا ہی تھا

ab ke barish mein to yeh car zayan hona hi tha
apni kachi bustiyon ko be nishaa hona hi tha

وفا کی کون سی منزل پہ اس نے چھوڑا تھا

کہ وہ تو یاد ہمیں بھول کر بھی آتا ہے

wafa ki kon si manzil pay is ne chorra tha
ke woh to yaad hamein bhool kar bhi aata hai

زخم جھیلے داغ بھی کھائے بہت

دل لگا کر ہم تو پچھتائے بہت

zakham jhele daagh bhi khaye bohat
dil laga kar hum to pachtaye bohat

کوئی تم سا بھی کاش تم کو ملے

مدعا ہم کو انتقام سے ہے


koi tum sa bhi kash tum ko miley
mudda hum ko intiqam se hai

اپنی گلی میں مجھ کو نہ کر دفن بعد قتل

میرے پتے سے خلق کو کیوں تیرا گھر ملے



apni gali mein mujh ko nah kar dafan baad qatal
mere pattay se Khalq ko kyun tera ghar miley

ایک ہی اپنا ملنے والا تھا

ایسا بچھڑا کہ پھر ملا ہی نہیں

aik hi apna milnay wala tha
aisa bitchrha ke phir mila hi nahi

شوقِ وفا نہ سہی

خوفِ خدا تو رکھ

shoqِ wafa nah sahi
khof
ِ kkhuda to rakh

اب میری راہ میں حائل نہیں ہوتی یادیں

اب تیرے شہر سے گزروں تو_  گزر جاتا ہوں.

ab meri raah mein haail nahi hoti yaden
ab tairay shehar se guzron to_ guzar jata hon .

مایوس ہو گیا دل اس زندگی کے سفر سے۔۔

مقصد کی محبتیں ہیں اور مطلب کی یاریاں۔۔

mayoos ho gaya dil is zindagi ke safar se. .
maqsad ki muhabbaten hain aur matlab ki yariyan. .

اب تو آواز بھی دو گے تو نہیں آئیں گے

ٹوٹنے والے قیامت کی انا رکھتے ہیں

ab to aawaz bhi do ge to nahi ayen ge
totnay walay qayamat ki anaa rakhtay hain

سوچوں تو ساری زندگی محبت میں کٹ گئ 

دیکھوں تو ایک شخص بھی میرا نہیں ہوا

sochon to saari zindagi mohabbat mein kat gai
dekhon to aik
shakhs bhi mera nahi hwa

پٹک رہی تھے زندگی ادھر سے ادھر

میں اس کی ہاتھ میں ایا ہوا تھا کیا کرتا

patak rahi thay zindagi idhar se idhar
mein is ki haath mein aya hwa tha kya karta

کچھ تو مجبوریاں رہی ہونگی ۔

یوں کوئی بے وفا نہیں ہوتا۔

kuch to majboriyan rahi hongi .
yun koi be wafa nahi hota .

عشق کر کے مکر گئی ہو گی۔

وہ تو لڑکی تھی ڈر گئی ہو گی۔

ishhq kar ke makr gayi ho gi .
woh to larki thi dar gayi ho gi .

ساتھ  تھے تو ہر لمحہ ہنستے رہتے تھے

جب ہونگی پلکیں نم تو یاد آؤں گا میں۔

sath thay to har lamha hanstay rehtay thay
jab hongi palken num to yaad aon ga mein .

تم پہ مرنے سے بہتر تھا

کسی حادثہ میں مر جاتے۔

tum pay marnay se behtar tha
kisi haadsa mein mar jatay .

کر کے وعدہ مکر گیا آخر

تو بھی دل سے اتر گیا آخر

kar ke wada makr gaya aakhir
to bhi dil se utar gaya aakhir

کیوں الجھے ہو ان سوالوں میں

بے وفا تم نہیں تو ہم ہی سہی۔

kyun ulje ho un salawon mein
be wafa tum nahi to hum hi sahi .

وہ جن میں چمکتے تھے وفا کے موتی

یقین جانو آنکھیں بے وفا نکلیں۔

woh jin mein chamakate thay wafa ke moti
yaqeen jano ankhen be wafa nikleen .

کہ دو اسے جدائی عزیز ہے تو روٹھ سکتا ہے۔

وہ ہمارے بن جی سکتا ہے۔ تو ہم بھی مر نہیں جائیں گے۔

ke do usay judai Aziz hai to roth sakta hai .
woh hamaray ban jee sakta hai. to hum bhi mar nahi jayen ge .

تمہارا تو گھر بھی مسجد سے دور ہے ہائے

تم تو میرے مرنے کا اعلان بھی نہیں سن پائو گے

tumhara to ghar bhi masjid se daur hai haae
tum to mere marnay ka elaan bhi nahi sun payo ge

چھوڑ دیا مجھے پر کبھی یہ سوچا تم نے

اب کبھی جھوٹ بولا تو قسمیں کس کی کھاؤ گی

chore diya mujhe par kabhi yeh socha tum ne
ab kabhi jhoot bola to kasmain kis ki khao gi

i

میرا قصہ تھا مختصر

میرا درد بھی لازوال تھا

میری زندگی وہ شخص تھا

جسے ہر فن میں کمال تھا

میں دکھوں سے بھری کتاب ہوں

مجھے سوچ سمجھ کے پڑھ ذرا

مجھے سمجھ سکا نا وہ بھی

جسے نفسیات میں کمال تھا۔

mera qissa tha mukhtasir
mera dard bhi la zawaal tha
meri zindagi woh shakhs tha
jisay har fun mein kamaal tha
mein dukhoon se bhari kitaab hon
mujhe soch samajh ke parh zara
mujhe samajh saka na woh bhi
jisay nafsiat mein kamaal tha .

سنا ہے شوق نہیں رکھتے تم محبت کا

مگر یقین مانو!!  برباد! تم کمال کا کرتے ہو۔

suna hai shoq nahi rakhtay tum mohabbat ka
magar yaqeen manu! ! barbaad! tum kamaal

ka karte ho .

جب تک نا لگے بے وفائی کی ٹھوکر

ہر کسی کواپنی محبت پر ناز ہوتا ہے


jab tak na lagey be wafai ki thokar
har kisi kwapni mohabbat par naz hota hai

تیری بے وفائی کا غم تو نہیں

مگر تو بے وفا ہے دکھ یہ بھی کم نہیں

teri be wafai ka gham to nahi
magar to be wafa hai dukh yeh bhi kam nahi

کسی بے وفا کی خاطر یہ جنوں فراز کب تک

جوتمہیں بھول چکا تم بھی اسے بھول جاؤ

kisi be wafa ki khatir yeh junoo frazz kab tak
jo tumhain bhool chuka tum bhi usay bhool jao

جب وفا کا ذکر آتا ہوگا

اے بے وفا! تجھے شرم تو آتی ہو گی۔

jab wafa ka zikar aata hoga
ae be wafa! tujhe sharam to aati ho gi .


وفا جس سے کی وہ بے وفا ہو گیا

جسے بت بنایا وہ خدا ہو گیا

wafa jis se ki woh be wafa ho gaya
jisay buut banaya woh kkhuda ho gaya

وہ اچانک تو نہیں بچھڑا

کئی,دن سے تھی بے چینی مجھے

woh achanak to nahi bitchrha
kayi, din se thi be cheeni mujhe

اس کے تبسم کی معصومیت پہ نا جا

بے وفا لوگ بڑے فنکار ہوتے ہیں

is ke tabassum ki masomiyat pay na ja
be wafa log barray fankar hotay hain

تیرا ہر انداز اچھا ہے

سواے نظر انداز کرنے کے


tera har andaaz acha hai
siwaye nazar andaaz karne ke

ہم ہی وفا شکن سہی اور ہم ہی بے وفا

تم تو وفا شعار تھے تم کیوں بادل گئے

hum hi wafa shikan sahi aur hum hi be wafa
tum to wafa shoaar thay tum kyun baadal gaye

ادھورا عشق تھا  لیکن

مکمل کھا گیا مجھ کو

adhoora ishhq tha lekin
mukammal kha gaya mujh ko

مجھے  احساس ہوگیا ہے  کہ

اسے کبھی احساس نہیں ہوگا

mujhe ehsas hogaya hai ke
usay kabhi ehsas nahi hoga

آپ سے ملنے سے قدرے بہتر تھا

ہم مٹی میں مل گئے ہوتے۔

aap se milnay se qadray behtar tha
hum matti mein mil gaye hotay .

میرے چھوڑنے کی دیر تھی

وہ مر گیا کسی ۔۔۔۔۔۔اور پر

mere chorney ki der thi
woh mar gaya kisi. .. .. . aur par

تیرے لہجے سے کیوں لگا مجھ کو 

تو میرے روٹھنے پہ راضی ہے

tairay lehjey se kyun laga mujh ko
to mere rothney pay raazi hai

نہ کوئی عہد نبھائے نہ ہمنوائی کرے

اسے کہ دو تسلی سے بے وفائی کرے

nah koi ehad nibhaye nah hamnawai kere
usay ke do tasalii se be wafai kere

فیصلہ تو تیرا تھا

لیکن دل جو ٹوٹا

وہ میرا تھا

faisla to tera tha
lekin dil jo toota
woh mera tha

بچپن ہی اچھا تھا

دانت ٹوٹتے تھے "دل" نہیں۔

bachpan hi acha tha
daant toot-te thay" dil" nahi .

زبردستی کی نزدیکیوں

سکون کی دوریاں بہتر ہیں

zabardasti ki nazdikiyon
sukoon ki dooria behtar hain

ہم بہت خاص تھے

یہ ان کے الفاظ تھے۔



hum bohat khaas thay
yeh un ke alfaaz thay .

وہ اب مجھ سے دور رہتا ہے

کسی نے اُسے سمجھایا بہت ہے۔

woh ab mujh se daur rehta hai
kisi ne ussay samjhaya bohat hai .

بے قدری تو ہونی تھی

ہم اس کو میسر جو تھے

be qadri to honi thi
hum is ko muyassar jo thay

عشق ادھورا رہا تو کیا ہوا

ہم تو پورے برباد ہوئے نہ

ishhq adhoora raha to kya hwa
hum to poooray barbaad hue noon

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں