2

اردو شاعری کی سب سے اوپر 35 محبت 2 لائنیں۔ پیار اردو شایری۔

محبت کیا ہے

اگر آپ اپنے آپ کو دوسروں کی نظر میں اور کسی دوسرے شخص کو اپنے اندر دیکھتے ہیں تو اسے محبت کہتے ہیں۔ محبت سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ اگر آپ کسی کے پاس بیٹھے ہیں تو آپ اسے بغیر سوچے سمجھے گھنٹوں بیٹھے ہوئے دیکھ سکتے ہیں۔اگر ایسا ہے تو ، آپ کہہ سکتے ہیں کہ آپ اسے پسند کرتے ہیں۔

محبت کا مطلب ہے اس طرح جوڑنا جس میں علیحدگی کی کوئی گنجائش نہ ہو۔ جہاں سمجھنے کی ضرورت ہے ، جہاں سوچنے کی ضرورت ہے ، جہاں کوشش ہے ، جہاں محبت نہیں ہے ، جہاں صرف دیکھنا ہے لیکن سوچنا نہیں ، سمجھنا نہیں ، اور سمجھنا نہیں ، اسے پینا کہتے ہیں۔

محبت اور دیوانگی میں زیادہ فرق نہیں ہے۔

محبت ایک لمحاتی احساس یا جذبہ نہیں ہے۔ مزاج اور احساسات کبھی کبھی ہر روز بدل جاتے ہیں۔ لیکن سچی غیر مشروط محبت ابدی ہے۔سندیپ مہیشوری

۔

*ساتھی خوبصورت ہونا چاہیے ، قابل تعریف نہیں۔.

ہمیں زندگی میں جن رشتوں سے محبت ہے ان میں اچھے برے سکھانے کی کوشش کرنی چاہیے۔ سچی محبت یہ ہے کہ جس سے ہم پیار کرتے ہیں اس کی آنے والی نسلیں طے ہوتی ہیں۔ بہترین رشتہ شروع سے آخر تک ہے۔ اس نے جنت بنائی ہے جہاں آپ کا پیارا آپ کے ساتھ نہیں ہے۔*

محبت وہ ہے جو ایک شخص دوسرے کے بارے میں محسوس کرتا ہے۔ محبت سب سے محفوظ احساس ہے۔ محبت ہر ایک کی بنیادی ضرورت ہے۔

انجام وفا یہ ہے جس نے بھی محبت کی

 

مرنے کی دعا مانگی جینے کی سزا پائی

anjaam wafa yeh hai jis ne bhi mohabbat ki
marnay ki dua mangi jeeney ki saza payi

تم محبت کو کھیل کہتے ہو

 

ہم نے برباد زندگی کر لی

tum mohabbat ko khail kehte ho
hum ne barbaad zindagi kar li

اک لفظ محبت کا ادنیٰ یہ فسانا ہے

 

سمٹے تو دل عاشق پھیلے تو زمانہ ہے

ik lafz mohabbat ka adna yeh fasana hai
simte to dil aashiq phailay to zamana hai

نہ پوچھو حسن کی تعریف ہم سے  

محبت جس سے ہو بس وہ حسیں ہے

nah pucho husn ki tareef hum se
mohabbat jis se ho bas woh hsin hai

مجھے اب تم سے ڈر لگنے لگا ہے

تمہیں مجھ سے محبت ہو گئی کیا

mujhe ab tum se dar lagnay laga hai
tumhe mujh se mohabbat ho gayi kya

کوئی چہرے کا دیوانہ ہےکوئی اخلاق کا

منزل سب کی مطلب ہے محبت کون کرتا ہے

koi chehray ka deewana hai koi ikhlaq ka
manzil sab ki matlab hai mohabbat kon karta hai

اپنے قبیلے کے رواجوں سے بغاوت کرکے

میں نے یک طرفہ محبت میں خسارےجھیلے

apne qabeeley ke riwajon se baghaawat karkay
mein ne yak Tarfah mohabbat mein khasaray jhele

تم محبّت بھی موسم  کی طرح نبھاتے هو

کبھی برستے هو کبھی بوند کو ترساتے هو

tum mohabbat bhi mausam ki terhan nibhate ho
kabhi baraste ho kabhi boond ko tarsatay ho

‏میری کامِل مُحبت کی ہمیشہ جستجُو ناقص

تیری لفظی مُحبت کے فسانے با ادب ٹھہرے

meri kaamil mohabbat ki hamesha justojoo naaqis
teri lafzi mohabbat ke fasanay ba adab thehray

دونوں جہان تیری محبت میں ہارکے

وہ جارہا ہے کوئی شبِ غم گزارکے

dono Jahan teri mohabbat mein haar k
woh ja raha hai koi shab_e_ gham gzarke

سوچوں تو ساری زندگی محبت میں کٹ گئ

دیکھوں تو ایک شخص بھی میرا نہیں ہوا

sochon to saari zindagi mohabbat mein kat gai
daikhon to 1 shakhs bhi mera nahi sun-hwa

چلو مُحسن مُحبّت کی نئی بُنیاد رکھتے ہیں

خُود پابند رهتے ہیں اُسے آزاد رکھتے ہیں

chalo MOHSIN mُhbbt ki nai bُnyad rakhtay hain
khud paband rehty hain ussay azad rakhtay hain

ہم نے محبت کا بھرم سب سے جدا رکھا ہے

دیکھ ذکر تیرا ہے __ مگر نام چھپا رکھا ہے

hum ne mohabbat ka bharam sab se judda rakha hai dekh zikar tera hai magar naam chhupa rakha hai


واپسی تُم پہ فرض تھوڑی ھے

یہ محبّت ھے قرض تھوڑی ھے️🥀

wapsi tum pay farz thori he
yeh mohabbat he qarz thori he ️
🥀

وہ اپنے بالوں سے اکتانے والی لڑکی

محبت کی پرواہ کیا خاک کرے گی

woh –apne balon se uktanay wali larki
mohabbat ki parwah kya khaak kere gi

ہم پیار لکھتے رہے وہ پیاز پڑھتے رہے

ایک نقتے نے میری محبت کا سالن بنا دیا

hum pyar likhte rahay woh pyaaz parhte rahay
aik nukty ne meri mohabbat ka saalan bana diya

سبق جب یاد کرتا ہوں تو خود کو بھول جاتا ہوں

مضامین محبت میں کتاب الٹی ، نصاب الٹا

sabaq jab yaad karta hon to khud ko bhool jata hon
mazameen mohabbat mein kitaab ulti, nisaab ulta

تم تو وفا شناس و محبت نواز ہو

ہاں میں دغا شعار سہی، بے وفا سہی

tum to wafa shanaas o mohabbat Nawaz ho
haan mein dagha shoaar sahi, be wafa sahi

‏محبت کبھی ختم نہیں ہوتی

‏صرف بڑھتی ہے

‏یا تو سکون بن کر یا درد بن کر

muhabbat kabhi khatam nahi hoti

sirf barhti hai
ya to sukoon ban kar ya dard ban kar

یہ محبت تو بہت بعد کا قصہ ہے 

میں نے اُس ہاتھ کو پکڑا تھا پریشانی میں

yeh mohabbat to bohat baad ka qissa hai
mein ne uss haath ko pakra tha pareshani mein

کی ترک محبت تو لیا درد جگر  مول

پرہیز سے دل اور بھی بیمار پڑا ہے

ki tark mohabbat to liya dard jigar mol
parhaiz se dil aur bhi bemaar para hai

کون کہتا ہے محبت کی زباں ہوتی ہے

یہ حقیقت تو نگاہوں سے بیاں ہوتی ہے

kon kehta hai mohabbat ki zuba hoti hai
yeh haqeeqat to nigahon se bayan hoti hai

اور بھی دکھ ہیں زمانے میں محبت کے سوا

راحتیں اور بھی ہیں وصل کی راحت کے سوا

aur bhi dukh hain zamane mein mohabbat ke siwa
rahtin aur bhi hain wasal ki raahat ke siwa

زباں زباں میں محبت کا ورد ہے لیکن

دِلوں دِلوں میں معض وقت کا گزارا ہے

zuba zuba mein mohabbat ka vird hai lekin
dilon dilon mein muaz waqt ka guzaraa hai

اُس کو پانے کا کہاں سوچا تھا

اچھا لگتا تھا سو محبت کرلی

uss ko panay ka kahan socha tha
acha lagta tha so mohabbat karli

تیری محبت کو کبھی کھیل نہیں سمجھا

ورنہ کھیل تو اتنے کھیلے ہیں کہ کبھی ہارے نہیں

teri mohabbat ko kabhi khail nahi samjha
warna khail to itnay khailay hain ke kabhi hare nahi

میں محبت کرتا ہوں تو ٹوٹ کے کرتا ہوں

یہ کام مجھے ضرورت کے متابق نہیں آتا

mein mohabbat karta hon to toot ke karta hon
yeh kaam mujhe zaroorat ke mtabq nahi aata

توڑینگے غرور عشق کا اور

اس قدر سدر جائیں گے

کھڑی رہے گی محبت اور

ہم سامنے سے گزر جائیں گے

tor daingy ghuroor ishhq ka aur
is qader sudar jayen ge
khari rahay gi mohabbat aur
hum samnay se guzar jayen ge

محبت تو وہ ہے جو ہاتھ تھامے

تو جنت تک لے جائے

mohabbat to woh hai jo haath thaamay
to jannat tak le jaye

میں چاہوں بھی تو وہ الفاظ نا لکھ پاؤں ،

جس میں بیان ہو جائے كے کتنی محبت ہے تم سے

mein chahoon bhi to woh alfaaz na likh paon ,
jis mein bayan ho jaye ke kitni mohabbat hai tum se

محبت کیا ہے ، دل کا درد سے معمور ہو جانا

متاع جاں کسی کو سونپ کر مجبور ہو جانا

mohabbat kya hai, dil ka dard se maamoor ho jana
Mataa jaan kisi ko saump kar majboor ho jana

ضبط تہذیب ہے محبت کی ،

اور تم سمجھتے ہو بے زُبان ہیں ہم

zabt tahazeeb hai mohabbat ki ,

aur tum samajte ho be zuban hain hum

کبھی پوری نہیں ہوتی ،

محبت وہ ضرورت ہے

kabhi poori nahi hoti ,
mohabbat woh zaroorat hai

جسم چھونے سے محبت نہیں ہوتی ،

عشق وہ جذبہ ہے جسے ایمان کہتے ہیں

jism chone se mohabbat nahi hoti ,
ishhq woh jazba hai jisay imaan kehte hain

محبت میں وفا ڈھونڈتے ہو ،

گویا پتھر میں خدا ڈھونڈتے ہو

mohabbat mein wafa dhoondtay ho ,
goya pathar mein kkhuda dhoondtay ho

دوسری بار بھی ہوتی تو ، تمہی سے ہوتی

میں جو بِالْفَرْض محبت کو ، دوبارہ کرتا

doosri baar bhi hoti to, tumhi se hoti
mein jo bilfarz mohabbat ko, dobarah karta

محبت میں زبردستی اچھی نہیں ہوتی ،

جب تمہارا دِل چاہے تب میرے ہو جانا

mohabbat mein zabardasti achi nahi hoti ,
jab tumhara dil chahay tab mere ho jana

محبت عزت ہے خیرات نہیں ،

نصیب سے ملتی ہے اوقات سے نہیں

mohabbat izzat hai khairaat nahi ,
naseeb se millti hai auqaat se nahi

لاجواب ہو جاتا ہوں تیری ہر بات پر اکسر ،

کہاں سے سیکھی ہے تم نے ترجمانی محبت کی

lajawab ho jata hon teri har baat par akser ,
kahan se sikhi hai tum ne tarjamani mohabbat ki

محبت زندگی كے فیصلوں سے لڑ نہیں سکتی ،

کسی کو کھونا پڑتا ہے اور کسی کا ہونا پڑتا ہے

mohabbat zindagi ke faislon se lar nahi sakti ,
kisi ko khona parta hai aur kisi ka hona parta hai



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں