2

عشق 2 لائنز اردو نظمیں-عاشق 2 لائنز اردو شایری۔

محبت محبت سے بالکل مختلف ہے اور محبت ان سے بالکل مختلف ہے۔ عام طور پر ہر ایک کے پاس ایک پیشن گوئی ہوتی ہے اور ہر چیز کو چھیننے کا شوق رکھتا ہے۔ مزاج
جو ان کے پاس ہے وہ محدود ہے۔

(چوٹی) اسے کہتے ہیں محبت۔

تمہیں کچھ بری طرح چاہیے۔ آپ اپنی ہر چیز دے کر یہ چیز حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ اسے کہتے ہیں محبت۔ اردو میں محبت کو محبت میں لکھا جاتا ہے۔

؟ عبادت کا مطلب ہے کہ ہم کسی ایسے شخص کو پسند کرتے ہیں جس کی ہم پیروی کرتے ہیں۔ محبت اس کی پیروی سے شروع ہوتی ہے۔

پیروی ہم نے اس سے زیادہ کرنا شروع کیا۔

پیروی وہ اس کی ہر بات کو قبول کرنے کے لیے تیار ہیں جب تک کہ وہ آپ سے بات نہ کرے ، لیکن آپ کو معلوم ہوا کہ اس کی پسند یہ ہے کہ اسے یہ چیزیں پسند ہیں ، اور ہم ان کو استعمال کرنا شروع کردیتے ہیں۔جی ہاں ، ہم وہ سب کچھ کرتے ہیں جو ہمارے پیارے پسند کرتے ہیں۔

اگر ہم اس سے براہ راست رابطہ نہیں کر سکتے تو اس کے دوست اس کے رشتہ داروں اور قریبی لوگوں سے رابطہ کرنے کی کوشش کریں گے اور پھر ان کے ذریعے ہم یہ جاننے کی کوشش کریں گے کہ اس کے لیے کیا فائدہ مند ہے۔ وہ کیا پہنتا ہے ، اسے کونسا رنگ پسند ہے ، اور وہ کس قسم کا شخص پسند کرتا ہے ، ہم اس کے مطابق تیاری کریں گے۔کوئی بھی چیز جو آپ کا عاشق پسند کرتا ہے ، اگر کوئی آدمی اسے بہت پسند کرتا ہے ، لیکن اس کا عاشق اسے پسند نہیں کرتا ہے ، تو وہ اسی وقت اسے چھوڑ دے گا ، اس کے بارے میں یہ نہیں سوچے گا کہ اسے یہ چیز کتنی پسند ہے ، کیونکہ محبت میں کوئی حکمت اور حکمت نہیں ہے۔ محبت سے کوئی تعلق نہیں

دوسرا حرف ش ہے۔ ش کا مطلب شک ہے۔ اب شک کرنے کا یہ مطلب نہیں کہ عاشق اپنے عاشق پر شک کرتا ہے پوری دنیا شک کرتی ہے کہ آیا عاشق کو برا شخص کہا جاتا ہے لیکن عاشق شک نہیں کر سکتا۔ اسے شک ہے کہ کوئی بھی اس سے زیادہ اس کے عاشق کو پسند نہیں کرتا ، تاکہ کوئی اس سے آگے نہ نکل جائے۔ جیسا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے جہادی دور میں فرمایا ، کون زیادہ حصہ ڈالے گا؟ حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ اپنے آدھے مال کے ساتھ تشریف لائے ، جب اس نے اپنا سب کچھ ولی ، نبی (رب العالمین) کے لیے وقف کر دیا تو اس نے کہا کہ اگر وہ گھر میں کچھ چھوڑتا ہے تو قیاماس نے کہا: “اللہ اور اس کا رسول میرے لیے کافی ہے۔ یہ محبت ہے۔ آپ کو شبہ ہے کہ کوئی آپ کو پیچھے نہیں چھوڑے گا۔ اس طرح آپ اپنے عاشق سے رجوع کرتے ہیں۔ اگر آپ سچی محبت کی بات کرتے ہیں تو لوگ ساری رات جھک جاتے ہیں۔” رکھیں بیٹھے

اب آخری حرف Q ہے۔ Q کا مطلب قربانی ہے۔ بزرگ کہتے ہیں کہ محبت ایک انتہائی نام ہے۔ جب محبت انتہائی ہوتی ہے تو عاشق اپنے پیارے کے لیے کچھ بھی کرنے کو تیار ہوتا ہے۔ آپ اسے کوڑے مار سکتے ہیں ، وہ اپنے پیار کے لیے سب کچھ دے سکتا ہے ، اور اس کے والدین اپنی دولت کے لیے سب کچھ ترک کر سکتے ہیں۔

محبت آپ کو خالق کے قریب لاتی ہے۔ محبت طاقت ہے۔

مجازی محبت میں ، آپ خدا کی تخلیق سے محبت کرتے ہیں ، اور حقیقی محبت میں ، آپ خدا سے محبت کرتے ہیں۔



رنجش ہی سہی دل ہی دکھانے کے لیے آ

آ پھر سے مجھے چھوڑ کے جانے کے لیے آ

ranjish hi sahi dil hi dikhaane ke liye aa
aa phir se mujhe chore ke jane ke liye aa

عشق نے غالبؔ نکما کر دیا

ورنہ ہم بھی آدمی تھے کام کے

ishhq ne Ghalib nikamma kar diya
warna hum bhi aadmi thay kaam ke

ہوش والوں کو خبر کیا بے خودی کیا چیز ہے

عشق کیجے پھر سمجھئے زندگی کیا چیز ہے

hosh walon ko khabar kya be khudi kya cheez hai
ishhq kije phir samjhiye zindagi kya cheez hai

عشق نازک مزاج ہے بے حد

عقل کا بوجھ اٹھا نہیں سکتا

ishhq naazuk mizaaj hai be had
aqal ka boojh utha nahi sakta

چپکے چپکے رات دن آنسو بہانا یاد ہے

ہم کو اب تک عاشقی کا وہ زمانا یاد ہے

chupkay chupkay raat din ansoo bahana yaad hai
hum ko ab tak aashiqii ka woh zmana yaad hai

کوئی سمجھے تو ایک بات کہوں

عشق توفیق ہے گناہ نہیں

koi samjhay to aik baat kahoon
ishhq tofeq hai gunah nahi

ترےعشق کی انتہا چاہتا ہوں

مری سادگی دیکھ کیا چاہتا ہوں

tre ishhq ki intahaa chahta hon
meri saadgi dekh kya chahta hon

یہ عشق نہیں آساں اتنا ہی سمجھ لیجے

اک آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے

yeh ishhq nahi aasan itna hi samajh lije
ik aag ka darya hai aur doob ke jana hai

کیا کہا عشق جاودانی ہے

آخری بار مل رہی ہو کیا

kya kaha ishhq javedani hai
aakhri baar mil rahi ho kya

ساری دنیا کے غم ہمارے ہیں

اور ستم یہ کہ ہم تمہارے ہیں

saari duniya ke gham hamaray hain
aur sitam yeh ke hum tumahray hain

وہ چہرہ کتابی رہا سامنے

بڑی خوب صورت پڑھائی ہوئی

woh chehra kitabi raha samnay
barri khoob soorat parhai hui

یہ میرے عشق کی مجبوریاں معاذ اللہ

تمہارا راز تمہیں سے چھپا رہا ہوں میں

yeh mere ishhq ki majboriyan Maaz Allah
tumhara raaz tumhe se chhupa raha hon mein

زندگی جب عذاب ہوتی ہے

عاشقی کامیاب ہوتی ہے

zindagi jab azaab hoti hai
aashiqii kamyaab hoti hai

حسن اک دل ربا حکومت ہے

عشق اک قدرتی غلامی ہے

husn ik dil rubaa hukoomat hai
ishhq ik qudrati ghulami hai

عاشقی صبر طلب اور تمنا بیتاب

دل کا کیا رنگ کروں خون جگر ہوتے تک

aashiqii sabr talabb aur tamanna betaab
dil ka kya rang karoon khoon jigar hotay tak

عشق کی چوٹ کا کچھ دل پہ اثر ہو تو سہی

درد کم ہو یا زیادہ ہو مگر ہو تو سہی

ishhq ki chout ka kuch dil pay assar ho to sahi
dard kam ho ya ziyada ho magar ho to sahi

عقل کو تنقید سے فرصت نہیں

عشق پر اعمال کی بنیاد رکھ

aqal ko tanqeed se fursat nahi
ishhq par aamaal ki bunyaad rakh

ہم اپنا عشق چمکائیں تم اپنا حسن چمکاؤ

کہ حیراں دیکھ کر عالم ہمیں بھی ہو تمہیں بھی ہو

hum apna ishhq chamkayeen tum

apna husn chamkaao
ke heraan dekh kar aalam hamein bhi ho

tumhe bhi ho

عشق بھی ہو حجاب میں حسن بھی ہو حجاب میں

یا تو خود آشکار ہو یا مجھے آشکار کر

ishhq bhi ho hijaab mein husn bhi ho hijaab mein
ya to khud aashkaar ho ya mujhe aashkaar kar

عاشقی میں بہت ضروری ہے

بے وفائی کبھی کبھی کرنا

aashiqii mein bohat zaroori hai
be wafai kabhi kabhi karna

عشق جب تک نہ کر چکے رسوا

آدمی کام کا نہیں ہوتا

ishhq jab tak nah kar chuke ruswa
aadmi kaam ka nahi hota

کیا حسن نے سمجھا ہے کیا عشق نے جانا ہے

ہم خاک نشینوں کی ٹھوکر میں زمانا ہے

kya husn ne samjha hai kya ishhq ne jana hai
hum khaak nasheenon ki thokar mein zmana hai

تم سے چھٹ کر بھی تمہیں بھولنا آسان نہ تھا

تم کو ہی یاد کیا تم کو بھلانے کے لئے

tum se chaatt kar bhi tumhe bhoolna aasaan nah tha
tum ko hi yaad kya tum ko bhulane ke liye

آتش عشق وہ جہنم ہے

جس میں فردوس کے نظارے ہیں

aatish ishhq woh jahannum hai
jis mein Firdous ke nazare hain

کیا کہوں تم سے میں کہ کیا ہے عشق

جان کا روگ ہے بلا ہے عشق

kya kahoon tum se mein ke kya hai ishhq
jaan ka rog hai bulaa hai ishhq

عشق کے شعلے کو بھڑکاؤ کہ کچھ رات کٹے

دل کے انگارے کو دہکاؤ کہ کچھ رات کٹے

ishhq ke sholay ko barkao ke kuch raat katay
dil ke angare ko dehkao ke kuch raat katay

عشق مجھ کو نہیں وحشت ہی سہی

میری وحشت تری شہرت ہی سہی

ishhq mujh ko nahi wehshat hi sahi
meri wehshat teri shohrat hi sahi

مرض عشق جسے ہو اسے کیا یاد رہے

نہ دوا یاد رہے اور نہ دعا یاد رہے

marz ishhq jisay ho usay kya yaad rahay
nah dawa yaad rahay aur nah dua yaad rahay

عشق میں بو ہے کبریائی کی

عاشقی جس نے کی خدائی کی

ishhq mein bo hai kbryayi ki
aashiqii jis ne ki khudai ki

کچھ کھیل نہیں ہے عشق کرنا

یہ زندگی بھر کا رت جگا ہے

kuch khail nahi hai ishhq karna
yeh zindagi bhar ka ruut jaga hai

*زندہ رہا تو   کرتا  رہوں   گا تم سے عشق   ۔

*ہاتھ جوڑ  کر  کہتا  ہوں مجھے   مار دیجئے

* zindah raha to karta rahon ga tum se ishhq .
* haath jor kar kehta hon mujhe maar dijiye

تم جو کرتے هو یہ عشق میں حساب کتاب

ہم جو کرنے بیٹھے تو خرید لیں گے تمہیں

tum jo karte ho yeh ishhq mein hisaab kitaab
hum jo karne baithy to khareed len ge tumhe

💔💔مجھ سے محبت پر مشورہ مانگتے ہیں لوگ 

    تیرا عشق کچھ اس طرح تجربہ دے گیا مجھے

mujh se mohabbat par mahswara mangte hain log
tera ishhq kuch is terhan tajurbah day gaya mujhe

ایک کلائی سے عشق ہے مجھ کو

اس پر بندہے دھاگے  کے میں صدقے

aik kalayi se ishhq hai mujh ko
is par bandhy dhaagay ke mein sadqy

سُنو

اَگر کِسی مُوڑ پِہ مِل جَاؤں تَو مُنہ پَھیر لینا۔

پُرانا عِشق ھُوں اُبھرا تَو قَیامت ھَو گی۔!

sunooo
Agar kisi mourr peh mil jaoon to munh Phair lena. ?
purana ishq hoon ubhra to qayamat ho gi.! ?

اے بت تراش عشق کو حیرت میں ڈال دے

پتھر کی آنکھ سے آنسو نکال دے

ae buut taraash ishhq ko herat mein daal day
pathar ki aankh se ansoo nikaal day

براہ کرم یہ بھی پڑھیں: محبت 2 لائن نظم۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں