2

نیا ایک رشتہ پیڈا کیون کیرن ہم۔



نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم

بچھڑنا ہے تو جھگڑا کیوں کریں ہم

خموشی سے ادا ہو رسم دوری

کوئی ہنگامہ برپا کیوں کریں ہم

یہ کافی ہے کہ ہم دشمن نہیں ہیں

وفا داری کا دعویٰ کیوں کریں ہم

وفا اخلاص قربانی محبت

اب ان لفظوں کا پیچھا کیوں کریں ہم

ہماری ہی تمنا کیوں کرو تم

تمہاری ہی تمنا کیوں کریں ہم

کیا تھا عہد جب لمحوں میں ہم نے

تو ساری عمر ایفا کیوں کریں ہم

نہیں دنیا کو جب پروا ہماری

تو پھر دنیا کی پروا کیوں کریں ہم

یہ بستی ہے مسلمانوں کی بستی

یہاں کار مسیحا کیوں کریں ہم


naya ik rishta peda kyun karen hum
bicharna hai to jhagra kyun karen hum
khmoshi se ada ho rasam doori
koi hungama barpaa kyun karen hum
yeh kaafi hai ke hum dushman nahi hain
wafa daari ka daawa kyun karen hum
wafa ikhlaas qurbani mohabbat
ab un lafzon ka peecha kyun karen hum
hamari hi tamanna kyun karo tum
tumhari hi tamanna kyun karen hum
kya tha ehad jab lamhon mein hum ne
to saari Umar aifaa kyun karen hum
nahi duniya ko jab parwa hamari
to phir duniya ki parwa kyun karen hum
yeh bastii hai musalmanoon ki bastii
yahan car masiihaa kyun karen hum

پڑھیں نوجوان ایلیا۔ اردو شاعری کی دو سطریں۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں