7

Top 20 Dhoka Poetry in Urdu Sms

We have collected hearted or dhoka poetry in urdu, There are many people in this world who deceive others who love them very much. This cheating can be in loved, business or friendship. Try not to deceive your loved ones.  Never break your trusting relationship. We hope our collection of dhoka shayari strong your loved relationship. Let’s read and share   

dhoka poetry urdu

Dhoka Poetry Urdu

حیرت نہ کیجیے یہ اصولِ تضاد ہے
دھوکہ وہیں پہ ہو گا جہاں اعتماد ہے

Herrat na kijye yeh asul e tazad hai
Dhoka waheen py ho ga jahan eitmad hai

dhoka poetry sms

Dhoka Poetry Sms

جن پہ ہوتا ہے بہت دِل کو بھروسہ تابشؔ
وقت پڑنے پہ وہی لوگ دغّا دیتے ہیں

Jin pay hota hai buhat dil ko bharosa Tabish
Waqt parrnay pay wahi log dagha dety hain

love dhoka poetry

Love Dhoka Poetry

کہیں دھوکے میں آنکھیں ہیں تو
کہیں آنکھوں میں دھوکہ ہے

Kahen Dhoky Main Ankhain Hain To
Kahen Ankhon Main Dhoka Hai

love cheating poetry

مدت ہوئی اک شخص نے دِل توڑ دیا تھا
اس واسطے اپنوں سے محبت نہیں کرتے

Muddat Hoi Ik Shaks Ne Dil Tor Diya Tha
Is Wasty Apno Say Muhabbat Nhi Karty

dhoka shayari urdu

Dhoka Shayari Urdu

جن کی فطرت میں ہو دھوکا دینا
وہ لوگ چاہ کر بھی بدلا نہیں کرتے

Jin ki fitrat main ho dhoka dena
Wo log chah kar bhi badla nahi karty

dil tutna poetry

میرے اندر کہیں کچھ ٹوٹا ہے
دُعا کرو کہ اعتبار نہ ہو

Mery Andar Kahen Kuch Tota Hai
Dua Karo Kay Etabar Na Ho

buri chal poetry

Dhoka quotes in urdu

تو بھی سادہ ہے کبھی چال بدلتا ہی نہیں
ہم بھی سادہ ہیں اسی چال میں آجاتے ہیں

To Bhi Sada Hai Kabhi Chaal Badalta He Nahi
Hum Bhi Sada Hain Usi Chaal Me Aajaty Hain

——————

ایسے ملا ہے ہم سے شناسا کبھی نہ تھا
وہ یوں بدل ہی جائے گا سوچا کبھی نہ تھا

Esy Mila Hai Hum Say Shanasa Kabhi Na Tha
Wo Youn Badal He Jaye Ga Socha Kabhi Na Tha

——————

اور کیا دیکھنے کو باقی ہے
آپ سے دل لگا کر دیکھ لیا

Aur Kiya Dekhny Ko Baqi Hai
Ap Say Dill Aga Kar Dekh Liya

——————

مجھ کو دھوکا دے گیا میرا ہی ذوقِ انتخاب
درحقیقت لوگ جو اچھّے نہ تھے ، اچھّے لگے

Mujh ko dhoka daay giya mera hi zauq e intkhab
Dar haqeeqat log jo achay na thay achay lagy

——————

یار میں اِتنا بھوکہ ہوں
دھوکہ بھی کھا لیتا ہوں

Yaar Me Itna Bhoka Hon
Dhoka Bhi Kha Sakta Hon

——————

اُسے معلوم ہے دُنیا کی ہمدردی میں دھوکے ہیں
اگر وہ سوگ میں بھی ہو تو بن ٹھن کر نکلتی ہے

Usy Maloom Hai Dunia Ki Hamdardi Main Dhoky Hain
Agar Wo Sog Me Bhi Ho To Ban Than Kar Nikalti Hai

——————

اس کو بھی میری طرح اپنی وفا پر تھا یقیں
وہ بھی شاید اسی دھوکے میں ملا تھا مجھ کو

Usko Bhi Meri Terhan Apni Wafa Par Tha Yaqeen
Wo Bhi Shayad Isi Dhoky Main Mila Tha Mugh Ko

——————

دشمنوں سے مٌحبّت ہونے لگی مٌجھ کو
جیسے جیسے اپنوں کو آزماتے چلے گئے

Dushmaon say muhabbat honay laagi mujh ko
Jesay jesay apnon ko aazmatay gaye

——————

Read More: Dukhi Poetry in Urdu



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں